166

مدینے والے میرے لجپال

مدینے والے میرے لجپال
صدقہ علی حسنین کا دے کر کردو مالامال

ناز ہے جن پر سب نبیوں کو ایسے سخی داتا ہیں وہ
کنگالوں کو کردیتے ہیں پل میں مالامال

واسطہ شبیر و شبر کا واسطہ بابا گنج شکر کا
واسطہ اجمیری خواجہ کا مشکل میری ٹال

ورد اویسی بلالی کیجیے عطا کوثر کے والی
نہ سونا نہ چاندی مانگوں نہ مانگو میں مال

تن من دھن اپنا لٹاکے آپ کے عشق میں خود کومٹا کے
کوئی بلھے شاہ بنا اور کوئی قلندر لال

علیم الدین علیم

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں