syed-masood-ul-hassan-shah-gillani-r-a 448

حضرت پیر صوفی سیدمحمد مسعودالحسن شاہ گیلانی ؒمجددی استانہ عالیہ چورہ شریف

حضرت پیرصوفی سید محمد مسعودالحسن شاہ گیلانی ؒمجددی (اپ کے حالات زندگی)

آپ بانی چورہ شریف حضرت پیر سید نور محمد شاہ گیلانی مجددی ؒ کے چھوٹے بیٹے حضرت پیر سید شاہ محمد شاہ گیلانی مجددی ؒ کے پوتے حضرت پیر سید محمد سعید شاہ گیلانی ؒکے دوسرے صاحبزادے تھے۔آپ کی ولادت با سعادت2۔جولائی 1923ء مطابق1342ھ کو ہوئی،لیکن سروس بک میں 30۔جون1923ء درج تھی۔تعلیم کی ابتدأ قریب ہی پنڈ سلطانی میں مولوی فیض عالم صاحب سے صرف و نحو اور فقہ کی تحصیل کی،بعد میں آپ کے والدبزرگوار ؒاور ماموں جان حضرت سید نور بادشاہ گیلانی ؒنے آپ کو گجرات میں سید ولایت علی شاہ ؒکے پاس انجمن خدام الصوفیہ میں 1940ء میں داخل کرا دیا۔آپ کے اساتذہ کرام میں سے سید ولایت علی شاہ ؒ، مفتی ئ زماں مفتی احمد یار خان گجراتی ؒ اورقاضی عبدالسبحان ؒکھلا بٹ والے آپ پر خاص توجہ دیتے رہے۔سید محمود شاہ ؒبن سید ولایت علی شاہ ؒ،حاجی محمد حنیف طیب سابق وفاقی وزیر مذہبی امور،علامہ محمد صدیق مجددی ؒآپ کے ہم سبق رہے۔

حزب الاحناف: 1945ء میں حزب الاحناف لاہور آگئے،تو علامہ ابوالبرکات سید احمد شاہ ؒآپ پر نہایت شفقت فرمایا کرتے رہے۔ مولانا امین اسحاق ؒاور مفتی محمد حسین نعیمی ؒآپ ؒکے خاص اساتذہ تھے۔معقولات و منقولات ِتفسیرو حدیث میں عبور حاصل کیا۔ آپ لاہورمیں دوسال رہے۔1947ء میں دورہ ئحدیث شروع ہونے پر قاضی عبدالنبی کو کب ؒ اور حافظ سید علی ؒکے ساتھ ایک دفعہ پھر گجرات آ گئے،اورانجمن خدام الصوفیہ میں دورہئ حدیث مکمل کیا۔ایک مرد مجاہد کی طرح بارہ12سال تحصیل علوم میں صرف فرمائے۔

تحصیل علوم باطنی:فراغت کے بعد،جب آستانہ عالیہ چورہ شریف واپس آئے،تو والد بزرگوار نے نہایت مختصر عرصہ میں سلوک مجددیہ سے نوازا،اور معرفت الٰہیہ کی منزل تک پہنچایا۔خلافت و اجازت ِبیعت چہار سلاسل سے نوازکر تبلیغ دین پر مامور فرمادیا۔ساتھ ہی رزق حلال کی تحصیل کے لئے محکمہ تعلیم سے منسلک ہو گئے۔1983ء میں ریٹائر ہونے کے بعد پوری دلجمعی سے تبلیغ دین اور اصلاح عامہ کے لئے خدمت سرانجام دیتے رہے۔ آپ کو اپنے شیخ کامل حضرت مجدد لف ثانی ؒسے بے پناہ محبت تھی،اسی لئے آپ نے توضیحات مجددیہ کے نام سے ایک کتاب لکھی،اور آپ ہر سال سالانہ عر س پر درس مکتوبات دیا کرتے تھے۔

جماعت خدام اہل سنت رجسٹرڈ:تبلیغ دین اسلام کے ذوق کے باعث آپ نے ہم دونوں بھائیوں کے ساتھ باہمی مشاورت سے ایک جماعت،موسومہ”جماعت خدام اہل سنت قائم کرنے کا فیصلہ فرمایا۔یہ جماعت حکومت پنجاب سے فروری 1981ء میں باقائدہ رجسٹرڈ کرائی،اور تبلیغ دین میں حتی المقدور کوشاں رہے۔اس کے تحت کئی علمی و تعارفی کتابچے طباعت کرا کر مفت تقسیم کئے،قبلہ صوفی صاحب کے وصال کے بعد2001ء سے آپ کے صاحبزادے حضرت پیر سید بدر مسعود شاہ گیلانی مدظلہ العالی نے تبلیغ اسلام کے اس سلسلہ کو جاری رکھا ہوا ہے،

آپ مؤرخہ14فروری2000ء کوہمیں داغ مفارقت دے گئے۔ آپ کے سجادہ نشینان میں آپ کے تین3صاحبزادے،حضرت پیر سید ظفر مسعود شاہ گیلانی مدظلہ العالی، حضرت پیر سیدبدر مسعود شاہ گیلانی مدظلہ العالی، حضرت پیر سیدڈاکٹر طارق مسعود شاہ گیلانی مدظلہ العالی ہیں،لیکن اس سلسلہ طریقت کو آپکے بیٹے حضرت پیر سیدبدر مسعود شاہ گیلانی مدظلہ العالی نے واہ فیکٹری کی سرکاری ملازمت سے ریٹائر منٹ کے بعد اس تبلیغ اسلام کوجاری رکھا ہوا ہے،اور آپ نے بیشمار کتب بھی تحریر فرمائی ہیں جن میں اثبات نسب،وظائف نوریہ،نور طریقت،شجرہ طریقت اور آج کل آپ مکتوبات امام ربانی حضرت مجدد الف ثانی ؒ کا فارسی سے آسان اردو میں ترجمہ فرمارہے ہیں،اس کے علاوہ ہدیہ مجددیہ اور رشحات کا ترجمہ فرمارہے ہیں۔

تحریر:۔محمد آصف سعید مجددی خادم آستانہ عالیہ چورہ شریف

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں