211

حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے بردباری کے متعلق فرمایا :

جو شخص بردباری اختیار کرتا ہے لوگ اس کی عزت و تعظیم کرتے ہیں

جو شخص اپنے آپ میں بردباری کی عادت ڈالتا ہے وہ بردبار ہوجاتا ہے

سگسے کی حالت میں تحمل و بردباری اللہ تعالی کے غضب سے بچاتی ہے

جواں مردی قناعت اور بردباری کا نام ہے

بردباری وہ چیز ہے کہ مومن کے تمام کام اس سے وابستہ ہیں اور جنت ایسے لوگوں کی جزا ہے جو مومن اور محسن  ہیں

بردباری صلح پسندی کا ذریعہ ہے

بردباری عقل کا اور سچائی بزرگی کا کمال ہے

بردبار شخص فحش نہیں بکتا  اور شریف آدمی کو وحشت میں نہیں ڈالتا

بردباری بےعقل کا سرپوش اور پرہیزگاری سمجھدار کی خصلت ہے

جس شخص میں بردباری نہیں اسے کچھ فائدہ نہیں

جس کو علم نہیں اسے ہدایت سے کچھ بہرہ نہیں

اپنے آپ کو خوش طبع ہنسانے والی حکایتوں اور فضول داستانوں سے بچائے رکھو

بہترین بردباری یہ ہے کہ انسان اپنے غصے کو پی جائے اور قدرت کے وقت نفس کو قابو میں رکھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں